جان لیوا کرونا وائرس کا علاج پانچ وقت وضو قرار، لاعلاج بیماری سے دن میں 5بار وضو کرنے سے بچاجاسکتا ہے

corona virus

ماہرین کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس کی کوئی دوا نہیں صرف احتیاطی تدابیر ہیں۔تفصیلات کے مطابق چین میں کرونا وائرس نے تباہی مچادی ہے۔ وائرس پر قابو پانے کیلئے چین کے سیاحتی مقام پر بھی پابندی لگا دی گئی ہے۔ لوگوں کو ہدایات جاری کردی گئی ہے کہ کوئی بھی شخص سیاحتی مقام کا رخ نہ کرے۔ پاکستان میں چینی باشندوں کی بڑی تعداد میں موجودگی ۔اور دونوں ملکوں کے درمیان سفر کرنے والے افراد کی بڑی تعداد کے پیش نظر۔

بروقت حفاظتی اقدامات کی غیر موجودگی میں پاکستان میں کرونا وائرس کے پھیلا کے خدشے کو خارج ازامکان نہیں قرار دیا جا سکتا۔اس حوالے سے وائس چانسلر یو ایچ ایس پروفیسر جاوید اکرام کہتے ہیں۔ کہ کرونا وائرس کی کوئی دوا نہیں ہے صرف احیتاطی تدابیر ہیں۔انہوں نے کہا کہ پانچ بار وضو کر نے سے کرونا وائرس سے بچا جا سکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں 95 فیصد مسلمان ہیں اور نماز پڑھنا ہر مسلمان پر فرض ہے۔اور نماز پڑھنے کے لیے وضو لازمی ہوتا ہے۔

جب ہم چھینک لیتے ہیں تو وائرس ناک کے خلیوں میں رہ جاتا ہے،چہرے پر بھی آ جاتا ہے،وضو کرنے سے چونکہ آپ کا چہرہ وغیرہ دھلتا رہتا ہے لہذا وضو کی بدولت اس وائرس سے محفوظ رہا جا سکتا ہے۔ حفاظتی اقدامات کے باعث 15 چینی شہر لاک ڈائون ہونے سے 5 کروڑ 70 لاکھ افراد کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑا ۔ جبکہ اب تک مجموعی طور پر 41 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

Leave a Comment